Download Urdu Font

What are Collections?

Collections function more or less like folders on your computer drive. They are usefull in keeping related data together and organised in a way that all the important and related stuff lives in one place. Whle you browse our website you can save articles, videos, audios, blogs etc and almost anything of your interest into Collections.
Text Search Searches only in translations and commentaries
Verse #

Working...

Close
Al-Tawbah Al-Tawbah
  • آل عمران (The Family of Imran)

    200 آیات | مدنی
    سورہ کا عمود اور سابق سورہ سے تعلق

    مندرجہ ذیل پہلوؤں سے یہ سورہ سابق سورہ (بقرہ) سے نہایت گہرا ربط رکھتی ہے۔

    ۱۔ ان دونوں کا موضوع ایک ہی ہے یعنی نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی رسالت کا اثبات۔ لوگوں پر عموماً اور اہل کتاب پر خصوصاً۔

    ۲۔ دونوں میں یکساں شرح و بسط کے ساتھ دین کی اصولی باتوں پر بحث ہوئی ہے۔

    ۳۔ دونوں کا قرآنی نام بھی ایک ہی ہے۔ یعنی الٓمٓ۔

    ۴۔ دونوں شکلاً بھی ایک ہی تنے سے پھوٹی ہوئی دو بڑی بڑی شاخوں کی طرح نظر آتی ہیں۔ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے بھی ان کو شمس و قمر سے تشبیہ دی ہے اور فرمایا ہے کہ یہ دونوں حشر کے دن دو بدلیوں کی صورت میں ظاہر ہوں گی۔ اہل بصیرت سمجھ سکتے ہیں کہ وصف اور تمثیل میں یہ اشتراک بغیر کسی گہری مناسبت کے نہیں ہو سکتا۔

    ۵۔ دونوں میں زوجین کی سی نسبت ہے۔ ایک میں جو بات مجمل بیان ہوئی ہے، دوسری میں اس کی تفصیل بیان ہو گئی ہے۔ اسی طرح ایک میں جو خلا رہ گیا ہے، دوسری نے اس کو پر کر دیا ہے۔ گویا دونوں مل کر ایک اعلیٰ مقصد کو اس کی مکمل شکل میں نہایت خوب صورتی کے ساتھ پیش کرتی ہیں۔

  • آل عمران (The Family of Imran)

    200 آیات | مدنی
    البقرۃ آل عمران

    یہ دونوں سورتیں اپنے مضمون کے لحاظ سے توام ہیں۔ پہلی سورہ میں یہود اور دوسر ی میں یہود کے ساتھ ،بالخصوص نصاریٰ پر اتمام حجت کے بعد بنی اسمٰعیل میں سے ایک نئی امت امت مسلمہ کی تاسیس کا اعلان کیا گیا ہے ۔ اِن میں خطاب اگرچہ ضمناً نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے بھی ہوا ہے اورمشرکین عرب سے بھی ، لیکن دونوں سورتوں کے مخاطب اصلاً اہل کتاب اور اُن کے بعد مسلمان ہی ہیں۔ اِن کے مضمون سے واضح ہے کہ یہ ہجرت کے بعد مدینہ میں اُس وقت نازل ہوئی ہیں، جب مسلمانوں کی ایک باقاعدہ ریاست وہاں قائم ہو چکی تھی اور نبی صلی اللہ علیہ وسلم اہل کتاب پر اتمام حجت اور مسلمانوں کا تزکیہ و تطہیر کر رہے تھے۔

    پہلی سورہ—- البقرۃ—- کا موضوع اہل کتاب پر اتمام حجت ، اُن کی جگہ ایک نئی امت کی تاسیس اوراُس کے فرائض کا بیان ہے۔

    دوسری سورہ—- آل عمران—- کا موضوع اہل کتاب ، بالخصوص نصاریٰ پر اتمام حجت، اُن کی جگہ ایک نئی امت کی تاسیس اوراُس کا تزکیہ وتطہیر ہے۔

  • In the Name of Allah
  • Click verse to highight translation
    Chapter 003 Verse 001 Chapter 003 Verse 002 Chapter 003 Verse 003 Chapter 003 Verse 004 Chapter 003 Verse 005 Chapter 003 Verse 006
    Click translation to show/hide Commentary
    یہ سورہ الم ہے۔
    سورۂ بقرہ کی طرح اِس سورہ کا نام بھی الم ہے ۔ اِس کی وجہ یہ ہے کہ اپنے مضمون کے لحاظ سے یہ دونوں سورتیں توام ہیں۔ اِس نام کے معنی کیا ہیں ؟ اِس کے متعلق اپنا نقطۂ نظر ہم نے سورۂ بقرہ کی آیت ۱ کے تحت تفصیل کے ساتھ بیان کر دیا ہے۔
    اللہ وہ ہستی ہے کہ اُس کے سوا کوئی الٰہ نہیں، زندہ اور سب کو قائم رکھنے والا ہے۔
    اصل میں لفظ ’الْقَیُّوْم‘ استعمال ہوا ہے ۔ اِس کے معنی ہیں: وہ ہستی جو خود اپنے بل پر قائم اور دوسروں کو قائم رکھنے والی ہو ۔ اِس سے اور اِس سے پہلے ’حَیّ‘ کی صفت سے قرآن نے اُن تمام معبودوں کی نفی کر دی ہے جو نہ زندہ ہیں ، نہ دوسروں کو زندگی دے سکتے ہیں، اور نہ اپنے بل پر قائم ہیں ، نہ دوسروں کو قائم رکھنے والے ہیں ، بلکہ خود اپنی زندگی اور بقا کے لیے ایک حی و قیوم کے محتاج ہیں۔
    (لوگوں کو امتحان میں ڈال کر وہ اُن کی ہدایت سے بے پروا نہیں ہو سکتا تھا ، لہٰذا) اُس نے یہ کتاب تم پر قول فیصل کے ساتھ اتاری ہے ، اُن پیشین گوئیوں کی تصدیق میں جو اِس سے پہلے موجود ہیں ، اور تورات و انجیل کو بھی۔
    n/a
    اِس سے پہلے اُسی نے لوگوں کے لیے ہدایت بنا کر اتارا تھا ، اور اب یہ فرقان بھی اُسی نے اتارا ہے۔ (یہ اللہ کی آیتیں ہیں، اور) جو لوگ (جانتے بوجھتے) اللہ کی آیتوں کے منکر ہوں، اُن کے لیے بڑا سخت عذاب ہے، اور اللہ زبردست ہے ، وہ (اِس طرح کے لوگوں سے) انتقام لینے والا ہے۔
    یعنی جب وہ لوگوں کا معبود بھی ہے اور حی و قیوم بھی تو کس طرح ممکن ہے کہ وہ اُنھیں امتحان کے لیے دنیا میں بھیجے اور پھر حق و باطل کے معاملے میں اُن کی رہنمائی نہ فرمائے ۔ چنانچہ لوگوں کو اختلافات کی تاریکی سے نکالنے کے لیے اپنی کتابوں کی صورت میں یہ روشنی اُس نے نازل کر دی ہے۔
    (اِس لیے کہ) اللہ سے نہ زمین میں کوئی چیز چھپی ہوئی ہے، نہ آسمان میں۔
    n/a
    وہی تو ہے جو ماؤں کے پیٹ میں تمھاری صورتیں، جس طرح چاہتا ہے ، بنا دیتا ہے۔ اُس کے سوا کوئی الٰہ نہیں۔ وہ زبردست ہے، بڑی حکمت والا ہے۔
    یعنی وہ جب اُن کی سرکشی کو دیکھ بھی رہا ہے ، اُن کا معبود بھی وہی ہے ، اُن سے انتقام کی قدرت بھی رکھتا ہے اور ایک حکیم کی حیثیت سے اُس کی حکمت کا تقاضا بھی ہے کہ اِس طرح کے مجرموں کو اُن کے انجام تک پہنچا دے تو ضروری تھا کہ وہ بدلہ لینے والا ہو ۔ و ہ اگر ایسا نہ کرے تو اِس کے معنی یہ ہوں گے کہ یا تو وہ اُنھیں دیکھ نہیں رہا یا تنہا وہی معبود نہیں ہے یا دنیا کے بعض معاملات اُس نے دوسروں کے سپرد کر دیے ہیں یا بے بس ہے کہ اِس طرح کے مجرموں کو پکڑنے کی قدرت نہیں رکھتا یا کھلنڈرا ہے کہ خیر و شر کو ایک ہی جگہ رکھ کر اُن کا تماشا دیکھ رہا ہے۔


  •  Collections Add/Remove Entry

    You must be registered member and logged-in to use Collections. What are "Collections"?



     Tags Add tags

    You are not authorized tag these entries.



     Comment or Share

    Join our Mailing List