۲۲- اوپر کی فصلوں میں جو باتیں بیان ہوئی ہیں مثلاً قسم سے ان کا تعلق محض اصولی ہے آیات قسم کی تفصیلی تاویلیں ہماری تفسیر میں اپنے اپنے موقع سے ملیں گی۔ تاہم ان فصلوں کے ضمن میں بھی ایسی باتیں آگئی ہیں جو قسموں کی اصل حقیقت اور ان کے صحیح رخ کو متعین کر دیتی ہیں مجھے یہ امر بھی واضح کر دینا چاہیے کہ اس کتاب میں اصلاً میرے پیش بحث قسم کا صرف وہ پہلو رہا ہے جس پر معترضین کوشبہ ہے لیکن بحث کے اقتضاء سے مجھے بعض ایسے گوشوں میں بھی نکل جانا پڑا ہے جو بسط وتفصیل چاہتے ہیں ۔ اس کے لیے لامحالہ  مجھے کہیں کہیں عنان قلم ڈھیلی کرنی پڑی ہے لیکن جونہی اصل شبہ رفع ہو گیا ہے میں نے موضوع بحث سے ہٹ جانے کا اندیشے سے فوراً عنان قلم کھینچ لی ہے اور استفصائے بحث کا خیال نہیں ہے ۔ اس صورت حال کی وجہ سے یہ کتاب ایجازواطناب اور اجمال وتفصیل دونوں کی جامع ہو گئی ہے ۔ ممکن ہے بعض عجلت پسند ناظرین اس کو دیکھ کر مجھ پر کہیں غیر ضروری اختصار اور کہیں غیر ضروری تفصیل کا الزام لگائیں لیکن انہیں یہ بات فراموش نہیں کرنی چاہیے کہ مسئلے کی خاص صورت نے مجھ کو ایسا کرنے پرمجبور کیا ۔ بایں ہمہ میں لغزش قلم سے بری ہونے کا دعویٰ نہیں کرتا۔

واسئال اللہ اللعضو و المغفرۃ فانہ ارحم الراحمین، و اختر دعوانا ان الحمد للّٰہ رب العالمین۔